Forum Menu - Click/Swipe to open
 
Top Members

Short Story -Master Saheb Lost Wage

You have contributed 36.4% of this topic

Thread Tools
Appreciate
Topic Appreciation
muslima
Rank Image
Offline
London
1,265
Sister
803
#1 [Permalink] Posted on 8th June 2007 15:49
Media Player
Report: Broken link reported.

This is really worth listening to


Jazakallah


source

report post quote code quick quote reply
back to top
#2 [Permalink] Posted on 8th June 2007 16:21
I remember listening to this with my sister and then with my dad. Such a good story!
report post quote code quick quote reply
back to top
#3 [Permalink] Posted on 9th June 2007 10:13
assalam,for d peapole(like me) who doesnt know about computer -prefard storeis in writing. i can only open some internet pages & read BUT cant download & listen.thanx.
report post quote code quick quote reply
back to top
Rank Image
muslimah_91's avatar
London
758
Sister
84
muslimah_91's avatar
#4 [Permalink] Posted on 12th June 2007 00:09

Assalamu Alaykum,


The text of the story:


ماسٹر صاحب کی تنخواہ












































































































































[چھٹی کلاس کی کلاس روم میں]




السلام علیکم و رحمت اللہ و برکاتہ



سب طلبہ:


و علیکم السلام و رحمت اللہ - بیٹھ جائے


ماسٹر صاحب (استاد):


سر! کیا بات ہے؟ آج آپ بہت پریشان نظر آ رہے ہیں


ایک طالب علم (عروہ):


اوہ، نہیں نہیں - چھوڑوں اس بات کو - سبق شروع کرو


ماسٹر صاحب:


نہیں سر، ایسا ہم سے سبق نہیں پڑھا جاۓ گا


عروہ:


اصل میں مسئلہ یہ ہیں کہ کل مجھے تنخواہ ملی تھی - وہ میں نہ لفافہ میں ڈال کر جیب میں رکھی تھی - پھر چھٹی کے وقت میں اپنے موٹر سائکل پر گھر چلا گیا - شام کے وقت جب مجھے کچھ پیسوں کی ضرورت پری تو میں نے اپنی جیب میں ہاتھ ڈالا، اور وہ تنخواہ والا لفافہ غائب تھا


ماسٹر صاحب:


!اوہ


سب طلبہ:




اللہ جانے وہ لفافہ کس وقت کس جگہ گرا ہوگا - بہر حال، اللہ مالک ہیں


ماسٹر صاحب:




میں نے ریگسٹر نکال دیا ہیں آپ لوگ حاضری دے دہ - جمیل؟


ماسٹر صاحب:


!حاضر، جناب


جمیل:




عروہ؟


ماسٹر صاحب:


!حاضر، جناب


عروہ:




شفیق؟


ماسٹر صاحب:


!حاضر، جناب


:شفیق





زبیر؟




ماسٹر صاحب:



!حاضر، جناب


:زبیر



...






اچھا بچھوں، اب کتابیں نکالوں اور پہلے کل کا سبق سناؤں


ماسٹر صاحب:


سر! آپ بہت پریشان لگ رہی ہیں - آج آپ کو چھٹی کر لینی چاہئے


ایک طالب:


نہیں بھائی، جو ہونا تھا وہ تو ہو چکا - میں خواہ مخواہ چھٹی نہیں کروں گا



ماسٹر صاحب:


آپ کی تنخواہ کتنی ہیں، سر؟


:عروہ


چار ہزار روپیہ


ماسٹر صاحب:


پھر وہ کلاس کو پڑھانے لگے - پیریڈ ختم ہونے پر وہ کلاس سے باہر نکل گۓ - جلدی اس سکول کے تمام اساتذہ کو معلوم ہو چکا تھا، کہ ماسٹر حذیفہ کی تنخواہ گم ہوگئ ہیں - وہ سب باری باری آکر ان سے افسوس کا اظہار کرنے لگیں


راوی:


پارشیال پیریڈ کے بعد سکول میں ہالف ٹیم ہوا - سب طالب علم سکول کی کینٹین کے ارد گرد جمع ہو کر کھانے پینے میں مصروف ہو گۓ - چھٹی کلاس کی باہر جانیں والی تھی، کہ مانیٹر نے بلند آواز میں کہا


راوی:


تمام طلبہ ذرا ٹھیر جائے - عظّام آپ کمرے کا دروازہ بن کر دے


مانیٹر (عروہ):


جی اچھا


عظّام:



[دروازہ بن کرے]






جی عروہ بھائی؟ کیا کہنا چاہتے ہیں آپ؟


ایک طالب:


دوستوں، ہمارے استاد ماسٹر حذیفہ بہت پریشان ہیں، کیوں کہ ان کے مہینے بھر کے تنخواہ کہیں گر گئ ہیں - تجویز یہ ہیں کہ ہماری کلاس میں ایک سو بیس لڑکے ہیں - اگر ہم تھوڑے تھوڑے پیسہ ملا کر چار ہزار روپیہ اکھٹے کر لیں، تو ماسٹر ساپ کی پریشانی دور ہو سکتی ہیں




:عروہ


!ہاں یہ ٹھیک ہیں، ہم تیار


بہت سے طلبہ:




تو پھر ہر لڑکے کے حصے میں چھتیس روپیہ آتے ہیں - یہ پیسہ میرے پاس جمع کرواۓ




:عروہ


عروہ بھائی، یہ طریقہ ٹھیک نہیں ہیں - بہت سے لڑکے غریب ہوں گے، اور بہت سے لڑکوں کے پاس پیسہ نہیں ہوں گے - اس لۓ ایسا کیا جاۓ کہ جو لڑکا جتنيں پیسے دے سکتا ہیں دے - جو نہیں دے سکتا وہ نہ دے


ایک طالب:


بالکل ٹھیک - میں اپنی طرف سے پچاس روپیہ شامل کرتا ہوں


:عروہ


پھر ہر لڑکے کے جیب سے پانچ، پانچ اور دس، دس کے نوٹ نکلنیں لگیں - بہت سے لڑکوں نے ایک، دو روپیہ بھی دۓ


راوی:


لوں بھائی - چار ہزار پچاس روپیہ جمع ہو گۓ - مسئلہ حل ہو گیا


:عروہ


نہیں جناب! مسئلہ حل نہیں ہوا


ایک طالب:


وہ کیسیں ہیں؟



بہت سے طلبہ:


کیا ماسٹر صاحب ہم سے یہ پیسہ لیں لینگیں؟ ہرگز نہیں لینگیں


دوسرے


طالب:


ہاں، یہ تو ہیں - پھر کیا کیا جاۓ؟


:عروہ


ہم یہ رقم ان کے پتے پر منی آرڈر کر دیتے ہیں


:پہلے طالب


لیکن بیجھنیں والوں کے نام اور پتا کیا لکھوں گے؟


تیسرے طالب:




کوئی فرضی نام اور پتا لکھ دیتے ہیں


دوسرے طالب:




اگر انہوں نے منی آرڈر وصول نا کیا، تو رقم ضائع ہو جاۓ گی


تیسرے


طالب:


cont...

report post quote code quick quote reply
back to top
Rank Image
muslimah_91's avatar
London
758
Sister
84
muslimah_91's avatar
#5 [Permalink] Posted on 12th June 2007 00:52

وہ منی آرڈر واپس نہیں کریں گے - میرے ذہن میں ایک ترتیب آئی ہیں - وہ یہ ہیں کہ منی آرڈر کے نیچے کوپن ہوتا ہیں - اس پر ہم لکھ دینگے کہ

عروہ:


"جناب ماسٹر صاحب، یہ رقم مجھے سڑک پر پڑی ملی ہیں - مجھے معلوم ہوا کہ یہ آپ کے تنخواہ ہیں - میں خود نہیں آسکتا، اس لۓآپ کو بزریعہ منی آرڈر بیجھ رہا ہوں"



!بہت اچھا

بہت سے

طلبہ:


اس کے بعد سب لڑکے کلاس روم سے باہر نکل گۓ - عروہ ڈاک خانہ سے منی آرڈر لیں آیا، اور رقم پر کر کے رکھ لیا - چھٹی کے بعد پانچ، چھ لڑکے قریب ڈاک خانہ جا پہونچے، اور ماسٹر حذیفہ کے نام اور گھر کے پتے پر چار ہزار کا منی آرڈر کر دیا

راوی:


*****



[ماسٹر صاحب کی گھر میں دروازہ کی گھنٹی بجیں]




کون ہیں بھائی؟

ماسٹر صاحب:

[دروازہ کھولے]



پوسٹ مان - سر آپ کا منی آرڈر آیا ہیں

:پوسٹ مان

منی آرڈر؟ میرے نام؟ کس نے بھیجا ہیں؟

ماسٹر صاحب:

جناب نیچے کوپن پر لکھا ہوا ہیں، پڑھ لی جۓ

:پوسٹ مان

ماسٹر صاحب نے کوپن پر درج شدہ تحریر پڑھ لی، تو بہت

خوش ہوے، اور رقم وصول کر لی


*****

راوی:

اگلے دن جب ماسٹر صاحب خوشی کی حالت میں سکول پونچھے، تو طلبہ چہرے پر خوشی کے آثار دیکھ کر خوش ہو گۓ

راوی:

پیارے بچھو، آج ميں بہت خوش ہوں

ماسٹر صاحب:

سر! ہمیں بھی اپنے خوشی کی بات بتا کر اپنے خوشی میں شریک کرے؟

:عروہ

کل ایک نہ معلوم شخص کی طرف سے میری تنخواہ کا منی آرڈر وصول ہوا - اس نے لکھا تھا کہ اس کو یہ رقم سڑک پر پڑی ملی تھی - اس لفافہ پر آپ کا نام بھی تھا

ماسٹر صاحب:

"میں خود تو نہیں آسکتا ہوں، لہاذا رقم منی آرڈر کر رہا ہوں"


سر! یہ تو بہت خوشی کے بات ہیں - کوئی بہت ایماندار شخص تھا

:عروہ

اللہ اس کی اس نیکی کو قبول کرے، اور اس کی دنیا اور آخرت سنوار دے


ماسٹر صاحب:

رقم ملنے کی خبر، پورے سکول میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی - تمام اساتذہ ان کو مبارکباد دے رہیں تھے اور اس نہ معلوم شخص کی تعریفے کر رہیں تھے - لیکن، کل جب ماسٹر صاحب کلاس میں داخل ہوے، تو ان کے چہرے پر پریشانی کے آثار تھے

راوی:

سر! کیا ہوا؟ آج آپ پھر پریشان نظر آ ریں ہیں

ایک طالب:

اصل میں یہ ہوا، کہ جب میں کل سکول سے گھر گیا، تو اپنے بستر پر لیٹے ہوے میری نظر میز کے نیچھے پڑے ہوے لفافہ پر پڑی - جب میں نے جھک کر لفافہ اٹھایا، تو وہ وہی لفافہ تھا جو گم ہو گیا تھا - اور اس میں پوری تنخواہ بھی موجود تھی - میرا خیال ہیں کہ میرے جیب سے پیسہ وہیں گر گۓ تھے

ماسٹر صاحب:

تو سر اس میں پریشانی کی کیا بات ہیں؟

:عروہ

میں پریشان اس لۓ ہوں کہ جب لفافہ میرے گھر میں گرا تھا، تو منی آرڈر کس نے کیا ہیں؟


ماسٹر صاحب:

سر، اگر آپ کے پاس تنخواہ دبل ہو گئی ہیں، تو اس میں فکر کی کیا بات ہیں؟ ہو سکتا ہیں کہ آپ کے کسی خیر خواہ نے بھیجی ہو

:عروہ

یہ کیا کہرہے ہو تم؟ یعنی میں معلوم بھی نہ کروں کہ آپ ہی یہ رقم کس مہربان نے بھیجی ہیں؟


ماسٹر صاحب:

سر! اگر آپ کو معلوم ہو جاۓ، تو آپ کیا کریں گے؟

:عروہ

میں اس رقم کو شکریہ کے ساتھ واپس کر دوں گا - اور اس کا یہ احسان کبھی نہیں بھولوں گا


ماسٹر صاحب:

سر! میں آپ کو اس کا نام بتا سکتا ہوں - لیکن شائد یہ ہیں کہ آپ اس رقم کو واپس نہیں کریں گے

:عروہ

یہ نہیں ہو سکتا - پیسے میں ضرور واپس کروں گا

ماسٹر صاحب:

دوستوں، میرا خیال ہیں کہ سر کو ساری بات بتا دی جاۓ - ورنہ یہ الجھن میں مبتلی رہیں گے - جو اچھی بات نہیں ہیں

:عروہ

!ہاں، یہ ٹھیک ہیں

بہت سے طلبہ:


عروہ نے ماسٹر صاحب کو سب کچھ بتا دیا - وہ حیرت زدو رہ گۓ - انہوں نے گھبرائی ہوئي آواز میں کہا

راوی:

تمہی.. تمہی اپنے ماسٹر کی پریشانی کا اتنا خیال ہیں؟ میرے بچھو، تم بہت عظیم ہو


ماسٹر صاحب:

پھر ماسٹر صاحب نے ہیڈ ماسٹر اور دوسرے اساتذہ کو اپنی کلاس کی کار کردگی کی متعلق بتایا


*****

راوی:

اگلے دن صبح اسمبلی کے دوران، ہیڈ ماسٹر صاحب نے ایک تقریر کی - جس نے ماسٹر حذیفہ صاحب کی تنخواہ گم ہونے، اور ان طالب علموں کے کار نامہ کے متعلق سب کچھ تمام بچھو کو بتا دیا - پھر انہوں نے کہا

راوی:

میں چھٹی کلاس کےسب طلبہ کو شاباشی دیتا ہوں، اور انہے مزید میں کام کرنے کی تلقین کرتا ہوں

ہیڈ ماسٹر:

میں اپنی کلاس کے مانیٹر عروہ کو دعوت دیتا ہوں کہ وہ آ کر مجھ سے اپنی رقم لیں جائی - اور جس لڑکے نے جتنی رقم دی ہیں واپس کر دے

ماسٹر صاحب:

ان کی کلاس کے تمام طلبہ آپس میں باتیں کرنے لگے - پھر ایک لڑکا سٹیج پر آیا، اور اس نے کہا

راوی:

جو رقم کسی نیک کام پر خرچ کی جا چکی ہوں، اسے واپس نہیں لینا چاہۓ - ہمارے استاد اس رقم کو واپس لینے پر اصرار کر رہے ہیں - اس لۓ ہم نے یہ فیصلہ کیا ہیں، کہ اس حقیر سی رقم کو سکول کے لائیبریری فنڈ میں جمع کرا دی جاۓ - ہمارے لائیبریری میں بہت کم کتابے ہیں - ان پیسہ سے معلوماتی، سائنسی، طاریقی اور اسلامی کتابے خریدی جاۓ - تاکہ طالب علموں نے مطالعہ کا شوق پیدا ہو، اور ان کے معلوماتے اضافہ ہو

:لڑکا

سکول کے سب طالب علم اور اساتذہ بے اختیار تالیاں بجھانے لگے - ابھی تالیاں بجھنا شروع ہی ہوئي تھی، کہ ہیڈ ماسٹر صاحب کی آواز گونجی

راوی:

خوشی کے موقع پر تالیاں نہیں بجھانے چاہۓ - بلکہ سبحاناللہ، ماشااللہ یہ نارے تکبیر لگانا چاہۓ

ہیڈ ماسٹر:

*****



report post quote code quick quote reply
back to top
#6 [Permalink] Posted on 12th June 2007 08:30
Zazakallah,BUT i cant read URDU.
report post quote code quick quote reply
back to top
Rank Image
Offline
London
1,265
Sister
803
#7 [Permalink] Posted on 13th June 2007 23:30
report post quote code quick quote reply
back to top
no-username's avatar
Offline
Unspecified
596
Unspecified
132
no-username's avatar
#8 [Permalink] Posted on 14th June 2007 07:56
Assalamoalaikum Warahmatullah


***Jazakillah khairun*** bint Mohammed ... although I'd grasped the gist of it, the full translation is much appreciated.


Fee amaanillah


Wassalaam

report post quote code quick quote reply
back to top
Rank Image
Aisha95's avatar
London
16
Sister
32
Aisha95's avatar
#9 [Permalink] Posted on 8th September 2008 18:56

Salaams


Interesting story!


Jazakallah

report post quote code quick quote reply
back to top
#10 [Permalink] Posted on 11th January 2014 18:03
jazakillah, sister, May Allah reward you


a suggestion: please change the colours from red and green to something else in the box below as some one may be colour blind
report post quote code quick quote reply
back to top
Rank Image
Offline
London
1,265
Sister
803
#11 [Permalink] Posted on 13th January 2014 15:56
Apologies broken media link , as the website that hosted it is undergoing a renovation.

Unfortunately I have not found a replacement.

report post quote code quick quote reply
back to top

 

Quick Reply

CAPTCHA - As you are a guest, you are required to answer the following:


In the above image: What's behind the word Yellow? (it's not the sun)